تبئیض

( تَبئِیض )
{ تَب + ئِیض }
( عربی )

تفصیلات


بءض  تَبئِیض

عربی زبان میں ثلاثی مجرد کے باب سے مشتق اسم ہے اردو میں من و عن داخل ہوا اور بطور اسم مستعمل ہے ١٨٧٨ء کو "تاریخ نثر اردو" میں مستعمل ملتا ہے۔

اسم کیفیت ( مؤنث - واحد )
١ - کسی لکھی ہوئی چیز کو صاف لکھنا، سنبھال کر لکھنا، مسودہ بنانے کے بعد مبیضہ تیار کرنا، تسوید کی ضد۔
"اردو میں ترجمہ شرح آداب المریدین کی کتابت اور تبئیض ہو رہی ہے"      ( ١٩٣٦ء، "سوانح خواجہ بندہ نواز" ١٧ )