ڈھوانا

( ڈَھوانا )
{ ڈَھوا + نا }
( سنسکرت )

تفصیلات


ڈھانا  ڈَھوانا

سنسکرت زبان سے ماخوذ اردو مصدر 'ڈھانا' سے اردو قواعد کے مطابق تعدیہ بنایا گیا ہے۔ اردو میں بطور فعل استعمال ہوتا ہے۔ ١٦٦٥ء کو "علی نامہ" میں مستعمل ملتا ہے۔

فعل متعدی
١ - منہدم کرانا، گرانا۔
"اسکول کی عمارت مولوی عبدالاحد نے خرید لی تھی اور اسے ڈھوا کر کٹڑہ بنا دیا تھا۔"      ( ١٩٥٦ء، میرے زمانے کی دلی، ١١٥:١ )