گھیا

( گھِیا )
{ گھِیا }
( سنسکرت )

تفصیلات


اصلاً سنسکرت زبان کا لفظ ہے۔ اردو میں سنسکرت سے ماخوذ ہے۔ اصل معنی اور اصل حالت میں عربی رسم الخط کے ساتھ بطور اسم اور گا ہے بطور صفت استعمال ہوتا ہے۔ ١٧٩٣ء کو "ذوق الصبیان" میں مستعمل ملتا ہے۔

صفت ذاتی ( واحد )
واحد غیر ندائی   : گھِیے [گھِیے]
جمع   : گھِیے [گھِیے]
١ - نرم، ملائم، گھی کی طرح کا۔ (فرہنگ آصفیہ، جامع اللغات)
اسم نکرہ ( مذکر - واحد )
واحد غیر ندائی   : گھِیے [گھِیے]
جمع   : گھِیے [گھِیے]
١ - لوکی، کدو (لاط:Cucurbita Lagenaria)
"ایک سیر گھیا لے کر چھیل لیں . ابال لیں۔"      ( ١٩٦٨ء، کیماوی سامان حرب، ٢٠٠ )
٢ - گول کدو جس کا گودا پیلا ہوتا ہے۔
"دو قسم کا سالن، قورمہ اور میٹھے گھیے کا۔"      ( ١٩٦٣ء، ساقی، کراچی، جولائی، ٤١ )
  • like ghi;  soft
  • tender