متجاوز

( مُتَجاوِز )
{ مُتَجا + وِز }
( عربی )

تفصیلات


جوز  تَجاوُز  مُتَجاوِز

عربی زبان میں ثلاثی مجرد کے باب سے مشتق اسم فاعل ہے، اردو میں بطور صفت استعمال ہوتا ہے اور تحریراً ١٨٣٧ء کو "ستۂ شمسیہ" میں مستعمل ملتا ہے۔

صفت ذاتی ( واحد )
١ - حد سے آگے بڑھنے والا، اپنی حد سے گزر جانے والا، تجاوز کرنے والا۔
"جس کی سانس پر صرف آس باقی تھی نمو کی پہلی منزل بھی اس نے ابھی طے نہ کی تھی حالانکہ اس کی عمر دس سال سے متجاوز کر چکی تھی"      ( ١٩٩٧ء، قومی زبان، کراچی، اگست ٥٥ )
  • مُتَزائِد